بلوچستان اسمبلی کے اراکین کی معذرت …….!

0

کوئٹہ۔۔۔۔ پولٹیکل ڈیسک
وفاقی حکومت کی اس پالیسی سے ہمیں اختلاف ہے، بلوچستان کو وسائل آبادی کی بنیاد پر دیئے جارہے ہیں

صوبے میں پہلے سے بچوں اور خواتین کی دوران زچکی اموات کی شرح زیادہ ہے چائنہ معاشی طور پر مستحکم ملک ہے وہاں لوگ ایک بچے سے دو کی طرف گئے ہیں

وسائل کی تقسیم ، ملازمتوں میں کوٹہ، اختیارات رقبے کی بنیاد پر دینے تک اس منصوبہ پر عملدارآمد نہیں ہوسکتا بلوچستان اسمبلی کے اجلاس میں صوبائی وزیر بہبود آبادی سردار عبدالرحمان کھیتران کا اظہار خیال

بلوچستان اسمبلی کے اراکین کی فیملی پلاننگ پر عملدرآمد سے معذوری ،وفاقی حکومت آبادی میں اضافہ روکناچاہتی ہے تو وسائل رقبہ کی بنیاد پر تقسیم کرے ،اراکین اسمبلی

یہ بھی پڑھیں
1 of 8,759

بلوچستان اسمبلی کے اجلاس میں بی این پی کے رکن ثناء بلوچ نے محکمہ بہبود آبادی سے متعلق سوال

صوبائی وزیر بہبود آبادی سردار عبدالرحمان کھیتران کا کہنا تھا

گزشتہ دنوں منعقد ہونے والے سمپوزیم میں میں نے بلوچستان حکومت کا موقف پیش کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں وسائل آبادی کے تناسب سے دیئے جاتے ہیں ہم کیسے آبادی کو کنٹرول کریں پہلے سے بلوچستان میں اموات کی شرح ولادت کی شرح سے زیادہ ہے جس کی وجہ سے ہماری آبادی پیچھے جارہی ہے

ثناء بلوچ کا صوبائی وزیر کے موقف سے اطمینان کا اظہار

جے یوآئی کے سید فضل آغا نے بھی سردار عبدالرحمان کھیتران کے موقف کی تائید کی بعدازاں ڈپٹی سپیکر سردار بابرموسیٰ خیل نے اس حوالے سے رولنگ دیتے ہوئے کہا کہ آبادی کو مد نظر رکھتے ہوئے این ایف سی ایوارڈ میں وسائل کی تقسیم کی جاتی ہے لہٰذا وسائل کے حصول کے لئے آبادی میں اضافہ ضروری ہے ۔

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.