گوادر میں مہنگائی بے قابو انتظامیہ تماشہ بین کا کردار ادا کر رہی ہے

0

گوادر ماہی گیر اتحاد نے پدی زر ماہیگیر شیڈ میں ایک پر ہجوم پریس کانفرنس سے ماہی گیر رہنما قادر بخش و دیگر نے خطاب کیا اور کہا کہ گوادر بین الاقوامی سمندر اور اپنی سر زمین کے بدولت دنیا میں ایک مقام بہترین رکھتی ہے اس کی زمینی باڈر پاکستان کی بہترین تجارتی مرکز ہے ایران بارڈر سے صدیوں سے اشیاء خوردونوش سے گوادر کے عوام ہمیشہ مستفید ہوتے رہے ہیں۔ خوشحال تھے
ضلع گوادر کے ماہی گیر اپنی کشتیوں کو چلانے کے لئے ایرانی پٹرول اور ڈیزل کا استعمال کرتے چلے آ رہے ہیں، جو پاکستانی پٹرول سے کئی گنا سستی پڑتی تھی۔ ماہی گیروں کا روزگا اسانی سے جاری تھا۔ وہ خوشحالی کی زندگی بسر کر رہے تھے۔
2022 سے ایرانی اشیاء باڈر سے پاکستان کے دیگر صوبوں کی بڑی بڑی کنٹینروں سے جب برائے راست منتقل ہونے لگے۔ تواس کے منفی اثرات برائے راست گوادر کے عام غریب ماہی گیروں اور دیگر کم آمدنی والے لوگوں پر پڑنا شروع ہوا ۔

جس سے ماہی گیری کی صنعت زبوں حالی کا شکار ہوا۔ آج حالت یہ ہے کہ ہر ماہی گیر پٹرول ڈیزل اور آئل کے لاکھوں روپے کے مقروض ہو چکے ہیں۔ ایسے کئی گھرانوں کے چولھے بجھ چکے ہیں۔ لوگ اب قرضوں سے جھکڑ چکے ہیں۔
مہنگائی آسمان کو چھو رہی ہے۔ غربت میں کئی سو فیصد اضافہ دیکھنے میں آ رہا ہے۔ اب نوبت یہاں تک پہنچی ہےکہ عام عوام دو وقت کی روٹی کے لئے بھی پریشان حال ہیں۔ بے روزگاری میں روز بروز اضافہ ہوا ہے۔ گوادر ضلع کے لوگ سخت اور گھمبیر صورتحال سے گزر رہےہیں ۔
گوادر ماہی گیر اتحاد نے اپنے عوام کی زبوں حالی کو دیکھ کر اب فیصلہ کیا گیا ہے کہ وہ اس مہنگائی کے خلاف بھر پور احتجاج کرینگے۔

یہ بھی پڑھیں
1 of 5,206

ضلع بھر میں اسی ہفتے کو احتجاج کا سلسلہ شروع کرنے سے پہلے ضلعی انتظامیہ کو ایک یاداشت پیش کی جائے گی۔ اگر انتظامیہ مہنگائی پر اور پرائس کنٹرول لسٹ پر عملدرآمد کرانے میں ناکام رہی تو ماہی گیر اتحاد انشا اللہ عید کے بعد ضلعی انتظامیہ کے خلاف سخت ترین احتجاج کا حق رکھتی۔

اس پریس کانفرنس میں بلوچستان نیشنل پارٹی کے ماہی گیر سکریٹری اور سابق صدر ماہی گیر اتحاد حاجی واجو خدا داد، ناکو غلام نبی، جلیل افضل اور دیگرماہی گیر رہنما بھی موجود تھے

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.