ہم خواتین کے سروں پر چادر ڈالتے ہیں نہ کہ انہیں نشانہ بناتے ہیں،میر سرفراز بگٹی

0

ویب ڈیسک
مسلم لیگ (ن) کے رہنماءوزیر داخلہ بلوچستان میر سرفراز بگٹی نے کہاہے کہ 30اکتوبر کو سیکورٹی فورسز نے غیر قانونی طورپر چمن بارڈر کراس کرنے والی ڈاکٹر اللہ نظر کی بیوی سمیت 4خواتین اور 3 بچوں کو حراست میں لیا تھا جنہیں وزیراعلی بلوچستان نواب ثناءاللہ زہری نے باعزت طورپر انکے اہلخانہ کے حوالے کردیا ہے

ہم بلوچی رسم ورواج کے پاسدار ہیں ہماری جنگ خواتین نہیں مردوں کے ساتھ ہیں ہم میں اور براہمداغ بگٹی ،حیربیارمری جیسے لوگوںمیں یہی فرق ہے کہ ہم خواتین کے سروں پر چادر ڈالتے ہیں نہ کہ انہیں نشانہ بناتے ہیں

افغانستا ن کی سرزمین اور ریاست دونوں ہمارے خلاف استعمال ہورہی ہیں ،یہ بات انہوں نے جمعہ کو وزیراعلی سیکرٹریٹ میں ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی

یہ بھی پڑھیں
1 of 8,719

انہوںنے کہاکہ بلوچستان کی رسم ورواج کو مدنظر رکھتے ہوئے وزیراعلی بلوچستان نے تمام خواتین اور بچوں کو خصوصی طورپر وزیراعلی ہاﺅس بلایا اور خواتین کے سرپر بلوچی رواج کے مطابق چادر ڈالی اور انہیں باعزت طریقے سے انکے اہلخانہ کے حوالے کیا جہاں سے ڈاکٹر اللہ نظر کی بیوی اپنے بھائی مہراللہ کے ہمراہ کراچی روانہ ہوگئی ہے

آج ہم نے ثابت کردیا کہ بلوچستان کے اصل وارث او ربلوچی رسم ورواج کے ہم پاسدار ہیں،شرپسند بلوچستان کی خواتین پر لینڈ مائنز سے حملے کرتے ہیں اور ہماری ماﺅں بہنوںکو شہید کرتے ہیں

لیکن ہم انکی بہنوں کے سروںپر چادر ڈال کر انکی حفاظت کررہے ہیں کیونکہ ہماری جنگ مردوں سے ہیں خواتین سے نہیں

افغانستان کی سرزمین اور ریاست دونوں ہمارے خلاف استعمال ہورہی ہے ہم نے اس سال فروری سے اب تک 11ہزار لوگوں کو غیر قانونی طورپر بارڈر کراس کرنے پر گرفتار کیا

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.