عراق اور ایران جانے والے زائرین کی تعدداد میں اضافہ، سہولیا ت کم 

0

کوئٹہ :ویب رپورٹر 

بلوچستان شیعہ کانفرنس کے رہنماؤں نے کہا ہے کہ عراق اور ایران زیارتوں کے سلسلے میں جانے والے زائر ین کی تعداد میں دن بدن اضافہ اور سہولیات نا کا فی ہیں

زائر ین کو تفتان پہنچا نے کے سلسلے میں حکومت رکاوٹیں کھڑی کر نے کی بجائے تعاون کرے۔

یہ بات بلوچستان شیعہ کا نفرنس کے سنےئر نائب صدراور فوکل پر سن برائے زائرین سید مسرت آغا ، سکیورٹی انچا رج قاسم حسینی ، سیکر ٹری فنا نس شبیر شاہ ودیگر نے پیر کو کوئٹہ پریس کلب میں پر یس کانفر نس کر تے ہوئے کہی ۔

انہوں نے کہا کہ زائرین کی تعداد ہر سال بڑھتی جارہی ہے پچھلے سال 440بسوں کا قافلہ زائرین کو لے کر ایران گیا جبکہ حکومت کے ساتھ 140بسوں کامعاہدہ تھا لیکن اس سال زائر ین کی تعداد بڑھنے سے 6سو بسوں کا قافلہ تفتان گیا ہے لیکن اس سلسلے میں صوبائی حکومت اور سیکورٹی ادارے تعاون نہیں کررہے ہیں ۔

یہ بھی پڑھیں
1 of 8,719

انہوں نے کہا کہ عبا دت کر نا سب کا بنیادی حق ہے اور مقدس مقامات کی زیارت کے لئے جا نے والوں کو کسی صورت کو روکا نہیں جاسکتا انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت ،آئی جی ایف سی ،کمانڈر سدرن کمانڈ کے تعاون سے تیس ہزار زائرین کو باحفاظت تفتان پہنچا کر ایران جانے کی اجازت دی گئی جس پر ہم حکومت اور دیگر اداروں کے مشکور ہیں۔

انہوں نے کہاکہ پانچ سے دس ہزار لوگوں کیلئے کئے جانے والے انتظامات کے تحت تیس ہزار لوگوں کا سنبھالنا ناممکن ہے تفتان بارڈر پر 35سے 40بسوں کی گنجائش موجود ہے لیکن وہاں پر 140سے 250بسوں کی گنجائش بنانا ناممکن تھا اس وجہ سے مشکلات درپیش ہوئیں اسکے علاوہ دیگر ضروریات پہنچانے میں بھی مشکلات کاسامنا تھا ۔

ایف آئی اے کے دفتر میں کمپیوٹر اور عملے کی کمی کی وجہ سے زائرین کا ڈیٹا لینے میں دشواریاں پیش آرہی تھی جس کی وجہ سے بہت سے زائر ین کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اور بد نظمی کی صوتحال بھی پیش آئی ۔

انہوں نے کہاکہ سوشل میڈیا پر زائرین کے حوالے سے جو ویویلا کیا جارہا ہے من گھڑت او ربے بنیاد ہے جس کی ہم مذمت کرتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ زائرین سے پیسے لینے کے الزمات بے بنیاد ہیں بارڈر پر جب سے نیا پاکستان ہاؤس بناہے زائرین سے پیسے لینے اور کرپشن کا مکمل خاتمہ ہوچکا ہے۔

بلوچستان شیعہ کانفرنس زائرین اور حکومت کے درمیان پل کا کردار ادا کررہی ہے اور ہمارا وفاقی حکومت اور دیگر صوبائی حکومتوں سے مطالبہ ہے کہ زائرین کے سلسلے میں بلوچستان کے ساتھ ممکن تعاون کریں ۔

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.