ڈیوٹی ٹائم 9 بجے ہیں اور ڈاکٹر حضرات 11بجے آتے ہیں ۔

ایک گھنٹہ او پی ڈی کے بعد گھروں یا اپنے کلینکس چلے جاتے ہیں ہم اپنے ہی لوگوں کے ساتھ غلط کررہے ہیں

0

(بلوچستان24ویب ڈیسک)

(کوئٹہ ( بلوچستان 24 رپورٹ :مدثر محمود

 گورنر بلوچستان جسٹس امان اللہ یاسین اچانک سول اسپتال کے دورے پر پینچ گئے ۔
تفصلات کے مطابق گورنر بلوچستان ریٹائرڈ امان اللہ یاسین زئی نے اچانک سول اسپتال کا دورہ کیا ڈاکٹروں کا اجلاس طلب کیا اور عوامی شکایات پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا

ڈاکٹرحضرات کی ڈیوٹی ٹائم 9 بجے ہے اور 11 بجے پہنچتے ہیں ایک گھنٹہ او پی ڈی کے بعد گھروں یا اپنے کلینکس چلے جاتے ہیں ہم اپنے ہی لوگوں کے ساتھ غلط کررہے ہیں اور سول اسپتال کے انتظآمیہ سے رپورٹ طلب کرلی

اس دوران میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے گورنر بلوچستان نے بتایا ایم ایس ڈی کی جانب سے فراہم کردہ 65 ادویات غیرمعیاری ہیں اور سیکرٹری محکمہ صحت کو ہدایت کی ہے کہ غیر معیاری ادویات فراہم کرنے والے کمپنیوں کو بلیک لسٹ کریں

ان کا مزید کہنا تھا کہ سول اسپتال کو صحیح سمت لیجانے کے لیے اقدامات کیے جارہے ہیں سول اسپتال 50 ہزار آبادی کے لیے بنا لیکن آج روزانہ کی بنیاد پر لاکھوں افراد علاج کیلئے آرہے ہیں اسپتال میں ادویات بستروں اور سہولیات کی کمی ہے

گورنر بلوچستان نے سول اسپتال کی انتظامہ سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ گائنی وارڈ سمیت سول اسپتال کے دیگر شعبوں سے مسلسل شکایات موصول ہو رہی تھی کوئٹہ کے شہریوں کو سول اسپتال سے بہتر ارویات اور انداز میں نہیں مل رہی ہیں

اسپتال انتظامہ اور محکمہ صحت یقین دہانی کرائے کہ مریضوں کے لیے اوریات 100 فیصد مناسب ہونگے ۔ ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے عہدیداورں نے اجلاس سے واک آوٹ کرتے ہو کہا کہ گودنر بلوچستان صرف فوٹو سیشن کے لیئے آئے ہیں اصل مسئائل سننے کو تیار نہیں

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: