سول سنڈیمن اسپتال کوئٹہ میں سالانہ 7لاکھ مریضوں کامعائنہ

0

ویب ڈیسک

محکمہ صحت بلوچستان کے اعداد و شمار کے مطابق بلوچستان میں43 گائناکالوجسٹ ذمہ داریاں سرانجام دے رہے ہیں جن میں سے 18 کی تعیناتی کوئٹہ جبکہ 25 گائناکالوجسٹ ڈاکٹروں کی تعیناتی صوبے کے دیگر علاقوں میں لائی گئی ہے

صوبے میں 35 ماہر امراض اطفال ڈاکٹرز اپنی ذمہ داریاں سرانجام دے رہے ہیں جن میں کوئٹہ میں 16 اور صوبے کے دور دراز علاقوں میں 19 ڈاکٹرز ڈیوٹی سرانجام دے رہے ہیں

مجموعی طور پر 40 انستھیزیا ڈاکٹروں کی تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے جن میں25ڈاکٹروں کی تعیناتی کوئٹہ میں جبکہ دیگر انستھیزیا ڈاکٹروں کی تعیناتی صوبے کے مختلف علاقوں میں کی گئی ہے اور ان تمام ڈاکٹروں کو تمام قوائد و ضوابط کے مطابق تعینا تیاں عمل میں لائی گئی ہیں۔

انستھیزیا میں 3 ڈاکٹرز ایف،سی،پی۔ایس ڈگری کے حامل ہیں، 5 ایم، سی، پی، ایس کرچکے ہیں اور 19 ڈاکٹرز پوسٹ گریجویٹ انسٹیٹیوٹ کوئٹہ سے انستھیزیا میں ڈپلومہ کرچکے ہیں

دوسرے صوبوں میں بھی بلوچستان کے 7 ڈاکٹرز انستھیزیا میں ٹریننگ حاصل کر رہے ہیں۔ اس شعبے کو ترجیح دینے کیلئے حال ہی میں حکومت بلوچستان نے اس شعبے میں کام کرنے والے ڈاکٹرز اور سٹاف کو دگنی تنخواہ کا اعلامیہ جاری کیا اور اس شعبے میں ٹریننگ کرنے والے ڈاکٹرز کو 50 ہزار روپے اضافی مشاہرہ دیا جاتا ہے ۔سول ہسپتال اور بی، ایم، سی ہسپتال میں 7 ڈاکٹرز اور 13 نرسز انستھیزیا کا ٹریننگ حاصل کررہے ہیں

یہ بھی پڑھیں
1 of 8,769

محکمہ صحت کی جانب سے صوبے کے دور دراز علاقوں میں کنٹریکٹ بنیادوں پر 480 سے زاتعیناتیاں عمل میں لائی گئی جنہیں پرکشش تنخواہیں دی جارہی ہیں جبکہ مزید تعیناتیا ں عمل میں لائی جارہی ہیں تاکہ صوبے کے دور دراز علاقوں میں اسپشلسٹ اور کوالیفائیڈڈاکٹروں کی کمی دور ہوسکے۔ ژوب، قلات، چاغی اور نوشکی میں سپیشلسٹ کی تعیناتی کئی دہائیوں کے بعد حال ہی میں کی گئی
تاکہ صوبے کے دور دراز علاقوں میں اسپشلسٹ اور کوالیفائیڈڈاکٹروں کی کمی دور ہوسکے۔ ژوب، قلات، چاغی اور نوشکی میں سپیشلسٹ کی تعیناتی کئی دہائیوں کے بعد حال ہی میں کی گئی۔ 309 ڈاکٹرز مختلف شعبوں میں ڈپلومہ اور ڈگری کرکے پوسٹ گریجویٹ انسٹیٹیوٹ کوئٹہ سے فارغ التحصیل ہوئے اور اپنے اپنے علاقوں میں خدمات سرانجام دے رہے ہیں

500 کے قریب ڈاکٹرز ملک کے دوسروے صوبوں کے اعلیٰ ہسپتالوں میں مختلف شعبوں میں زیر تربیت ہیں جو ایف، سی، پی،ایس اور دیگر کورسز میں اعلیٰ تربیت لینے کے بعد بلوچستان میں ہی خدمات سرانجام دیں گے

حکومت بلوچستان ترجیحی بنیادوں پر محکمہ صحت میں علاج و معالجے کی سہولیات بہتر بنانے کیلئے دستیاب وسائل کے مطابق بھر پور اقدامات کر رہی ہے۔ اس بات کا اندازہ اس سے لگایا جاسکتا ہے کہ صرف سول ہسپتال کوئٹہ میں سالانہ 7 لاکھ مریضوں کا معائنہ ہوتا ہے اور 14 ہزار کے قریب بڑے آپریشن ہوتے ہیں۔

ٹراما سینٹر کوئٹہ کا سی۔ٹی۔سکین مشین 24 گھنٹے ایمرجنسی سروس کیلئے دستیاب ہے اسکے علاوہ شیخ زید ہسپتال، بی۔ایم۔سی اور سول ہسپتال کوئٹہ میں جدید ایکسرے، سی ٹی سکین اور ایم۔آر۔آئی سہولیات اعلیٰ کوالیفائیڈ ڈاکٹرز کی نگرانی میں بلا تعطل دستیاب ہیں۔

محکمہ صحت حکومت بلوچستان کی جانب سے جاری وضاحتی بیان میں کہاگیا ہے کہ نجی چینل پر چلنے والی خبرمیں ڈاکٹروں کی تعیناتی سے متعلق اعداد وشمار غلط ظاہر کئے گئے ہیں جس میں کوئی صداقت نہیں اور اس حوالے سے ڈاکٹروں کی تعیناتی سے قبل اسناد کی مکمل جانچ پڑتال ہوتی ہے

وضاحتی بیان میں کہا گیاہے کہ صحافتی اصولوں کو مدنظر رکھتے ہوئے کوئی بھی خبر نشر یا شائع کرنے سے قبل موقف لینا ضروری ہے اور آئندہ یکطرفہ خبریں نشر یا شائع کرنے سے گریز کیا جائے

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.