بلوچستان ۔۔۔۔۔ڈالر کی قیمت پر ٹماٹر

خصوصی رپورٹ

وفاقی ادارہ شماریات کے مطابق گزشتہ سال کے مقابلے میں رواں سال اکتوبرکے مہینے میں مہنگائی کی شرح میں اضافہ دیکھا گیا

اعداد وشمار کے مطابق مہنگائی میں اضافہ کی شرح ( افراط زر ) ایک اعشاریہ بیاسی فیصد رہی جو گیارہ فیصد گزشتہ سال کے مقابلےمیں زیادہ ہے

ایک ماہ کے دوران مہنگائی کے بڑھنے کی شرح 1 اعشاریہ 82 فیصد رہی اور گزشتہ سال اکتوبر کی نسبت مہنگائی بڑھنے کی شرح 11 فیصد سے زائد رہی، جب کہ جولائی تا اکتوبر گزشتہ سال کی نسبت مہنگائی 10.32 فیصد بڑھی ہے۔

ایک سال کے دوران گیس کی قیمتوں میں 55 فیصد اضافہ اور بجلی 10.44 فیصد مہنگی ہوئی، پٹرول 21 فیصد مہنگا ہوا، آٹا 12 فیصد، پیاز کی قیمت 131 فیصد ، دال مونگ 46 فیصد، دال ماش 32 فیصد، آلو 45 فیصد، سبزیاں 40 فیصد، چینی 35 فیصد، خوردنی تیل اور گھی 18 فیصد مہنگے ہوئے۔

دوسری جانب بلوچستان میں بھی مہنگائی کی لہر ہے اور سبزیوں کی قیمتوں میں اضافے کیساتھ بعض علاقوں میں ٹماٹر ڈالرکے ریٹ پر مل رہا ہے

بلوچستان 24کی تحقیق کے مطابق سب سے زیادہ مہنگائی چاغی  میں دیکھنے میں آرہی ہے جہاں ٹماٹر کی فی کلو قیمت 153روپے ہے جو ڈالر کے ریٹ سے بھی بڑھ کر ہے

https://pagead2.googlesyndication.com/pagead/js/adsbygoogle.js

اپنا تبصرہ بھیجیں