ایرانی سپریم لیڈر کرپشن سے پاک اور اسلام سے محبت کرنے والے انسان ہیں

0

کوئٹہ

گلوبل جسٹس رائٹس فورم کے چیئر مین سید عصمت اللہ بخاری نے کہا ہے کہ پا ک ایران صرف ایک اسلامی ممالک ہی نہیں بلکہ ہمسایہ ممالک بھی ہیں ان دونوں ممالک کو ایک دوسرے کا دفاع کرنا وقت کی ضرورت ہے اگر ایران ملک میں کسی کے ساتھ بھی غلط ہو رہا ہوتو وہ عدلیہ کا سامنا کریں نہ کہ بالا جواز ایسے اقدامات کی طرف قدم رکھے جو اسلام اور ملک کے خلاف اقدامات ہو اللہ پاک کا حکم ہے کہ اسلامی ملکی بادشاہ ملک کے اندر فسادات کرنے والوں کا خاتمہ کریں جبکہ ماضی میں سپریم لیڈر کی بنیاد رکھنے کے بعد ہی ایران ملک ایک مضبو ط اسلامی ملک تشکیل ہوا ہے اورماضی میں سابق سپریم لیڈر کی کوشیشوں سے اور غیر ملکی دشمن عناصر کو بری طرح شکست دیا تھا ‘

 

یہ بات انہوں نے کوئٹہ پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی‘ انہوں نے کہاکہ ایران ملک بھر میں اسلام نام ہی صرف روشن نہیں بلکہ ہر طرح کے برائیوں کا مکمل طور پر خاتمہ ہوچکا ہے اور ایران ملک بھر میں ملکی دشمن عناصر کے کچھ نیٹورک امریکہ اور اسرائل کے پالسیوں کے تحت ایران ملک کو تھوڑنے شراب نوشی، نائٹ کلبوں ،زنا کاری اور نشہ عام کرانے اور اسلامی نظام کو جڑ سے اکھاڑنے کی سازش ہوا ہے کہ جس کی ابتدا مشہد سے شروع ہوکر مکمل طور پر ایران ملک کو اپنے لپیٹ میں لے گیا ہیں اسی وجہ سے امریکی صدر نے ٹویٹ کیا تھا کہ ایرانی عوام میں بالاآ عقل آرہی ہے کہ کیسے ان کی دولت کو لو ٹا جارہا ہے اور ملکی دفاع پر پیسوں کو دہشتگردی کے نام سے نوازا گیا ہے

 

یہ بھی پڑھیں
1 of 8,727

جبکہ اس بات سے مکمل طور پر باخبر ہوں اور خصوصی ذرائع کے مطابق اس بات کا مجھے علم ہے کہ ایرانی سپریم لیڈر کرپشن سے پاک اور اسلام سے محبت کرنے کے علاوہ ایک ایماندار اور ایرانی عوام کے ساتھ دل کے گہرایؤں سے محبت کرنے والا شخص ہے اور بڑے پیمانے پر پیستہ کی کاشتکاری اور زاتی جائداد کا مالک بھی ہے اور انہیں ملکی خزانے کی پیسوں کی کوئی ضرورت نہیں ہے جبکہ کسی بھی غلط شخص کی ہمایت کسی بھی صورت میں نہیں کرتاجبکہ ایسے شخصیات کے خلاف بغاوت کرنے والوں کو راتوں رات پھانسی دی جائے کہ جس کی تعداد کروڑں سے ہی تجاوز کیوں نہ ہوجبکہ اسلام کی دفاع کیلئے ایرانی سپریم لیڈر کو ہر گیز پیچھے نہیں ہٹنا چایئے

 

کیونکہ ایران ملک بہت ہی زیادہ قربانیوں کے بعد ایک طاقتور ملک تشکیل ہوا ہے جس کیلئے ضروری ہے عوام کے موبائلوں کو پوری طور پر ٹریس کرکے آزادی کے نام پر ملکی بنیادوں کو نقصان پہنچانے والوں کو سخت سے سخت ترین سزا دی جائے اور کسی بھی آدمی کو چھوڑنے یا سزا اور پھانسی نہ دینے کی صورت میں ملکی دشمن عناصر کے لوگوں جرائت بڑھ جائیگا جو ایک اسلامی جموریہ ایران کے بنیادوں کو سخت ترین نقصان پہنچ سکتا ہے اور ایران ملک میں صرف اسلام کی بنیادیں ہی جڑ سے اوکھڑ نہیں جاتی بلکہ ایران ملک اندر سے عراق،یمن اور شام جیسے ممالک کی طرح تبائی کاشکار ہوگا اس لیئے ضروری ہے کہ گرفتار لوگوں میں سے ایک بھی آدمی کو سزا کے بغیر نہیں چھوڑنا چایئے اور سفارشات کرنے والے لوگوں کے بھی گرفتاری عمل میں لائی جائے تاکہ کچھ لوگوں کے قربانیوں سے ایران ملک زندگی بھر کیلئے ایک اسلامی اور پرآمن اور ملکی اور عوامی دفاع کے بنیادوں پر روشناس ملک رہے ۔

 

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.