انصاف کرنے والے فریق نہ بننے

0
کوئٹہ: ویب رپورٹر

جمعیت علماء اسلام کے مرکزی جنرل سیکرٹری ڈپٹی چےئرمین سینٹ مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا ہے کہ جب انصاف کرنے والے خود فریق بن جائے تو ملک میں افراتفری کا ماحول پیدا ہونا یقینی ہے۔

پارلیمنٹ کے مارچ سے پہلے ختم ہونے کی چہ مگوئیاں ہورہی ہے ایک وزیراعظم رخصت ہو چکا ہے دوسرے کا کچھ پتہ نہیں بیرونی عناصر اندرونی حالات خراب کرنے کے ساتھ ملک کی معیشت بہتر بنانے والے سی پیک کو بھی متنازعہ بنا رہے ہیں ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے ممتاز قبائلی رہنمائپرنس آغا سلمان کریم احمد زئی‘سردار اسد شاہوانی اور مولانا اختر محمد پرکانی کے ساتھیوں سمیت جمعیت علمائاسلام میں شمولیت کے موقع پر کوئٹہ پریس کلب میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

یہ بھی پڑھیں
1 of 8,750

انہوں نے کہاکہ مولانا مفتی محمود نے اپنے دور میں مرزائیوں اور قادیانیوں کو غیر مسلم قراردیا لیکن نہ جانے گزشتہ کئی دن قبل پارلیمنٹ سے قادیانیوں کو دوبارہ مقام دینے کیلئے سازشیں بل پاس کیا لیکن اللہ تعالیٰ کی فضل سے اور مولانا فضل الرحمن کی بروقت کارروائی سے اس بل کو واپس اپنی صورت میں بحال کردیا

انکا کہنا تھا کہ مفتی محمود کی جدوجہد کی وجہ سے1973کی رو سے قادیادنیوں اور مرزائیوں کو غیر مسلم قرار دیا آج جتنے بھی سازش کرینگے اس وقت بھی مولانا مفتی محمود کے وارث موجود ہے ہماری موجودگی میں یہ لوگ کبھی بھی کامیاب نہیں ہوسکتے 

انہوں نے کہاکہ آج قبائلی شخصیات نے جمعیت علماء اسلام میں شامل ہو کر یہ ثابت کردیا کہ غریب عوام کے ساتھ قبائل بھی جمعیت علماء اسلام کا حصہ بن سکتے ہیں 

تقریب سے صوبائی امیر مولانا فیض محمد‘صوبائی جنرل سیکرٹری ملک سکندر خان ایڈووکیٹ‘ پرنس آغا سلمان کریم احمد زئی‘صوبائی سالار حافظ ابراہیم لہڑی‘صوبائی ترجمان حاجی جانان آغا‘سینیٹر مفتی عبدالستار‘حاجی انور اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔ 

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.