پاکستان میں ڈالر کی اونچی اڑان نے کوئٹہ کے لنڈا بازار کی رونقیں ماند کردیں

0
دکاندار شاہد

رپورٹ:محمد ارباز شاہ ۔۔کیمرہ مین:ناصر مراد

کوئٹہ میں جہاں سردی شدید ہوتی ہے اور روزگار کے ذرائع کم ہونے کے باعث لوگوں کی قوت خرید نہ ہونے کے برابر ہے جس کے تدارک کیلئے کم آمدنی والے افراد لنڈا بازار کا رخ کرتے ہیں جہاں ہر قسم کے گرم کپڑے ،جیکٹس ، بچوں کے کپڑے ،رضائیاں اور دیگر ضرورت کاسامنا ملتا ہے

پرانے سامان کے یہ بازار پورے پاکستان میں مشہور ہیں اور ملک بھر سے لوگوں اپنی ضرورت کی

شہری یاسر
یہ بھی پڑھیں
1 of 8,746

چیزیں خریدنے کیلئے یہاں کارخ کرتے ہیں

ملک میں حالیہ کچھ مہینوں میں ڈالر کی قیمتوں میں اضافے اور پاکستانی روپے کی قدر میں کمی نے ان بازاروں کاکام بھی متاثر کردیا جس کے باعث بیوپاری کہتے ہیں کہ ہمارے کاروبار کودھچکالگا ہے کیونکہ ڈالر کی قیمت بڑھنے سے یہ سامان بھی مہنگا آرہا ہے اور لوگ پرانی قیمت کاتقاضا کرتے ہیں جس کے باعث خریداری میں کمی آگئی ہے

دوسری جانب شہری بھی مہنگائی کے باعث پریشان وہ گلہ کرتے ہیں کہ لنڈا بازار کے دکاندار وں نے قیمتوں میں بہت اضافہ کردیا ہے

بلوچستان 24 سے باتھ کرتے ہوئے شہری یاسرعلی نے کہا کہ ڈالر کی قیمت میں اضافہ ہوا ہے جس سے لنڈابازار میں ملبوسات مہنگے داموں مل رہے ہیں۔

ایک طرف کوئٹہ میں سردی کی شدت میں اضافہ ہوا ہے جسکی وجہ سے لوگ گرم ملبوسات پہننے پر مجبور ہیں تو دوسری طرف ڈالر کی قیمت میں اضافے کے باعث ملبوسات کی قیمتوں میں اضافے نے عوام کی مشکلات میں مزید اضافہ کردیا ہے۔
شہری عتیق الرحمن کا کہنا تھا کہ ایک طرف ڈالر مہنگا ہے تو دوسری جانب حکومت نے مصنوعات پر بھاری ٹیکس عائد کردیئے ہیں جسکی وجہ سے عوام لنڈابازار سے ملبوسات مہنگے داموں خریدنے پر مجبور ہوچکے ہے

عتیق الرحمن نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ڈالر کی قیمت میں کمی لائے تاکہ عوام کی مشکلات کم ہوسکیں۔

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.