جامعہ بلوچستان،ہراسمنٹ اسکینڈل , سول سوسائٹی کا مظاہرہ

رپورٹ۔۔۔عبدالکریم

جامعہ بلوچستان کے طالبات کو ہراساں کرنے کے اسکینڈل کے خلاف سول سوسائٹی کے زیراہتمام کوئٹہ پریس کلب کے سامنے احتجاج مظاہرہ ہوا

مظاہرین نے پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر طالبات کو ہراساں کرنے کیخلاف مطالبات درج تھے

مظاہرے سے مقریرین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اسکینڈل کا شفافانہ طریقے سے تحقیقات کی جائے اور واقعہ میں ملوث افراد کو گرفتار کرکے قرار واقعی سزا دئی جائے.

مقریرین کا مزید کہنا تھا کہ جامعہ بلوچستان صوبے کی واحد بڑی جامعہ ہے جس میں صوبے کے دوردراز علاقوں سے طالبات پڑھنے کیلئے آتی ہے ان طالبات کیلئے جامعہ کے ماحول کو محفوظ بنانے کیلئے ناگزیر اقدامات اٹھانے چاہیے

تاکہ بڑی تعداد میں طالبات پڑھنے کیلئے جامعہ بلوچستان کا رخ کرلیے، لیکن افسوس کن امر یہ ہے کہ ایک سازش کے ذریعے صوبے کو ناخواندگی کے اندھیروں میں دھکیلا جارہا ہے جس کے ہم بھرپور مذمت کرتے ہیں.

مظاہرے میں بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنما ڈاکٹرجہانزیب جمالدینی، غلام نبی مری، جامعہ بلوچستان کے اکیڈمک اسٹاف کے سربراہ کلیم اللّٰہ بڑیچ، سماجی رہنما جلیلہ حیدر اور دیگر خواتین نے بڑی تعداد میں شرکت کی.

https://pagead2.googlesyndication.com/pagead/js/adsbygoogle.js

اپنا تبصرہ بھیجیں