اپوزیشن اتحاد کے قیام سے ملک میں سیاسی ہلچل میں اضافہ

0

سیاسی منظر نامہ

اپوزیشن اتحاد کے قیام سے ملک میں سیاسی ہلچل میں اضافہ ہوگیا ہے ،

ملکی سیاست میں برپا تلاطم کے پیش نظر حکومت اور اپوزیشن کے درمیان ٹکراؤ اور کشیدگی کم کرنے کادریچہ کھلنے کاامکان ہے ۔

گزشتہ رو ز اپوزیشن رکن کے نجی بل کی تحریک پر ووٹنگ میں شکست تسلیم کرنے سے اپوزیشن کا انکار دھماکہ خیز ثابت ہوا اور احتجاج پر ڈپٹی اسپیکر کو فیصلہ واپس لینا پڑا

حکومتی اتحادی جماعت بی این پی نے بھی تحریک انصاف سے راہیں جدا کرنے کا عندیہ دے دیا۔

کراچی میں بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ سردار اختر مینگل نے میڈیا سے گفتگو کے دوران کہا کہ حکومت نے ہمارے مطالبات پورے کئے تو ساتھ چلیں گے ہمارا حکومت گرانے کا کوئی ارادہ نہیں مگر حکومت کو گرانے کی کوشش کی گئی تو ہم بچانے بھی نہیں آئیں گے۔

یہ بھی پڑھیں
1 of 8,730

سردار اختر مینگل نے زرداری اور شہباز شریف کی ملاقات کو ملک میں سیاسی استحکام کیلئے اچھا قرار دیادونوں رہنماوٴں کی ملاقات اچھی بات ہے۔

حکومت سے صدارتی انتخاب اور صوبائی انتخابات کے حوالے سے بات چیت ہوئی ہے گوکہ اس پر ہمارے تحفظات ابھی برقرار ہیں تاہم اگر حکومت ہمارے مطالبے مان لے تو ہم ان کیساتھ چلنے میں کوئی مسئلہ نہیں

واضح رہے کہ اس سے قبل اپوزیشن جماعتوں کے اجلاس میں بی این پی کے ارکان بھی شرکت کرچکے ہیں

وزیراعظم عمران خان نے اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر سے بات چیت کے دوران کہا کہ کسی کی کرپشن چھپانے کیلئے پارلیمنٹ کواستعمال نہیں کرنے دینگے احتساب پر کسی قسم کاسمجھوتہ نہیں ہوگا

وزیراعظم نے پارلیمنٹ میں اپوزیشن کے رویہ پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ایک ٹویٹ میں کہا کہ اپوزیشن کا اسمبلی سے واک آؤٹ حکومت پردباؤ ڈال کر این آر او لینے کیلئے ہے

میڈیا رپورٹس کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے پارلیمانی اجلاس میں ارکان اسمبلی نے وزرا کیساتھ رابطے کے فقدان کا شکوہ کیا جب سے حکومت میں آئے ہیں پارٹی سطح پر رابطے ختم کردئیے گئے ہیں یہی حالات رہے تو جنوبی پنجاب میں مشکل کاسامنا کرنا پڑیگا

قومی اسمبلی کے اجلاس میں بلاول کا نام ای سی ایل سے نہ نکالنے پر اپوزیشن نے احتجاج کیا اپوزیشن ارکان نوید قمر ،شازیہ مری ،شاہد خاقان نے کہا کہ حکومت توہین عدالت کررہی ہے

اجلاس میں بلوچستان میں خشک سالی کا مسئلہ بھی اٹھایا گیا ارکان نے کہا کہ چھ سال سے بارشیں نہیں ہورہی ہیں حکومت کوئی اقدام نہیں کررہی ۔حکومت نے بتایا کہ خشک سالی کی صورتحال کے بارے میں صوبائی حکومت سے تفصیلات لیکر ایوان کو اعتماد میں لیا جائیگا

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.