بلوچستان: بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے واقعات میں اضافہ

بارہ بچوں اور بچیوں کو مدرسہ جات میں جنسی تشدد کا نشانہ بنایا

رپورٹ بلوچستان24

غیر سرکاری تنظیم نے پاکستان جنسی زیادتی کے واقعات کے حوالے سے رپورٹ جاری کردی

رپورٹ کے مطابق جنوری سے جون تک 1304بچوں کو جنسی تشدد کا نشانہ بنایا گیا

ساحل کی رپورٹ کے مطابق سب سے زیادہ پنجاب میں 652جنسی تشدد کا نشانہ بنے جبکہ
سندھ میں 458، بلوچستان میں 32، خیبرپختونخوا میں 51، اسلام ا?بادمیں 90 جب کہ آزاد کشمیر میں 18، گلگت بلتستان کے 3 بچے جنسی تشدد کا نشانہ بنے۔

اسی عرصے کے دوران صرف لاہور میں 50بچے جنسی تشدد کا نشانہ بنے۔

رپورٹ کے مطابق 12 بچوں اور بچیوں کو مدرسہ جات میں جنسی تشدد کا نشانہ بنایا گیا، جنوری سے جون کے دوران 729 بچیاں اور575 بچے جنسی تشدد کا شکار ہوئے، اس عرصے میں روزانہ 7 سے زائد بچے جنسی زیادتی کا شکار ہوئے

پاکستان میں رواں سال جنوری سے جون تک 1300 بچوں کو جنسی ز?ادتی کا نشانہ بنایا گ?ا۔

غیر سرکاری تنظیم ساحل نے سال 2019 میں بچوں سے جنسی واقعات کی رپورٹ جاری کی ہے جس کے مطابق جنوری سے جون تک 1304 بچوں کو جنسی تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں