بلوچستان میں 60فیصد لوگ گردوں کے مریض

ویب ڈیسک

وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ حکومت بلوچستان گردوں کے امراض میں مبتلا مریضوں

کو بہترین علاج معالجے کی فراہمی کے لئے ہر ممکن کوشش کر رہی ہے ہر ضلع کے ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں ڈائیلائسسیز کی سہولت کی فراہمی کو یقینی بنایا جارہا ہے۔

گردوں کے امراض کے عالمی دن کے موقع پراپنے ایک پیغام میں وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ دنیا میں اس وقت 850ملین لوگ گردوں کے مختلف امراض میں مبتلا ہیں، گردوں کی بیماری سے ہر سال 2.4ملین لوگ موت کا شکار ہوجاتے ہیں اور اس میں ہر سال تیزی سے اضافہ ہورہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ماہرین کے مطابق بلوچستان میں 60فیصد لوگ گردوں کے مختلف امراض میں مبتلا ہیں۔پینے کے صاف پانی کی عدم دستیابی،گوشت، غیر معیاری مشروبات، نمک کا زیادہ استعمال گردوں کے ا مراض کی سب سے بڑی وجہ ہے۔

ماہرین کے مطابق معیاری خوراک، صاف پانی کا زیادہ استعمال اور ورزش گردوں کے ا مراض سے بچا سکتی ہے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ بلوچستان کے لوگوں میں گردوں کے امراض میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے، جس کا ایک اہم سبب لوگوں میں شعور کی کمی ہے

متعلقہ حکومتی اور غیرسرکاری ادارے گردوں کے امراض سے محفوظ رہنے کے لئے عوام میں شعور وآگاہی پیدا کرنے کے لئے آگے آئیں،

صوبائی حکومت عوام کو صاف پانی کی فراہمی یقینی بنارہی ہے جس سے بڑی حد تک گردوں کے امراض میں کمی آئے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں