بلوچستان کے تعلیمی اداروں میں آیسولیشن وارڈ اور قرنطینہ سینٹرز قائم کردیئے گئے ۔

گزشتہ روز بلوچستان میں نئے 11 کرونا وائرس کیسسز کی تصدیق ‘ ہونے کے بعد صوبے میں کرونا وائرس کیسسز کی تعداد 92 ہوگئی ہے

0

رپوٹ مدثر محمود
بلوچستان24
بلوچستان میں ہفتے کے روز کورونا کے مزید 12 کیسز سامنے آئے جس کی تصدیق صوبائی چیف سیکریٹری کی جانب سے کی گئ
چیف سیکریٹری کے مطابق صوبے میں اب تک 104 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوگئی ہے ۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ کوروناوائرس کے پھیلاو کوروکنے کے لیے میل جولنے پر پابندی ہے یہ وائرس میل جول سے پھیلتا ہے لہذا عوام سے اپیل ہے کہ وہ گھروں میں محدود رہیں ۔ کورونا وائرس کے خطرہ پیش نظر محکمہ صحت بلوچستان نے بلوچستان کے تعلیمی اداروں میں آیسولیشن وارڈ قرنطنیہ سینٹرز قائم کردیے گئے ۔
محکمہ صحت بلوچستان کے جاری کردا نوٹیفکشن میں بلوچستان کے مختلف تعلیمی اداروں میں قرنطینہ اور آئسولیشن سنیٹرز دئے گئے ۔
بینظیر اسکول ہزار ٹاؤن میں 50 بستروں پر مشتمل قرنطینہ سینٹر اور پولی ٹیکنیک گرلز کالج سریاب روڈ میں 30 بستر پولی ٹیکنیک بوائز کالج میں 35 تعمیر نو کالج مشرقی بائی پاس میں 35 گورنمیٹ بوائز اسکول کچلاک میں 15 ار ایچ سی بوروزئی میں 5 گورنمیٹ گرلز کالج سیٹلائٹ ٹاؤن میں 10 گورنمیٹ بوائز اسکول پشتون آباد میں 10 گورنمیٹ ڈگری کالج کوئٹہ کنٹ میں 25 بستروں پہ مشتمل قرنطنیہ سینٹرز قائم کر دیے گئے ۔

دوسری جانب گورنمیٹ گرلز کالج مری آباد میں 40 آیسولیشن وارڈ ۔ تعمیرنو کالج مغربی بائی پاس میں 35 گورنمیٹ بوائز اسکول میں 10 گورنمیٹ گرلز کالج کوئٹہ کینٹ میں 25 اور گورنمیٹ گزلز کالج کواری روڈ میں 20 کمروں پر مشتمل آسولیشن وارڈ قائم کردیئے گئے ہیں بلوچستان میں تعلیمی اداروں میں قائم قرنطنیہ سینٹرز کی کل تعداد 220 جبکہ آیسولیشن وارڈ کی کل تعداد 130 ہیں جو کہ بلوچستان کے مختلف تعلیمی اداروں میں قائم کئے گئے ہیں ۔

گزشتہ روز بلوچستان میں نئے 11 کرونا وائرس کیسسز کی تصدیق ‘ ہونے کے بعد صوبے میں کرونا وائرس کیسسز کی تعداد 92 ہوگئی ہے ڈی جی ہیلتھ کی رپوٹ کے مطابق صوبے میں ابتک 84ہزار 437افراد کی اسکیننگ کی گئی ہے کرونا وائرس سے متاثرہ مریض کوئٹہ کے 2 ہسپتالوں میں زیر علاج ہے تفتان قرنطینہ میں اس وقت 427افراد موجود ہیں میاں غنڈی قرنطینہ میں اس وقت 532 افراد موجود ہیں

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: