نواز شریف کے پلیٹ لیٹس کم ہونے کی وجوہات کیا ہوسکتی ہیں

لاہور: سروسزاسپتال میں زیر علاج سابق وزیراعظم نواز شریف کی طبیعت میں بہتری آئی ہے لیکن ڈاکٹرز کی تشویش برقرار ہے۔

اسپتال ذرائع کے مطابق نواز شریف کے پلیٹلٹس(خون میں موجود سفید خلیے) بڑھ کر پچاس ہزار تک پہنچ گئے ہیں۔ میڈیکل بورڈ کا کہنا ہے کہ پلیٹلٹس کا نمبرز کم ازکم ڈیڑھ لاکھ تک ہونا ضروری ہے۔

ذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف کے پلیٹلٹس کی تعداد ابھی تک تسلی بخش نہیں اور انہیں او پازیٹیو خون کی ضرورت ہے۔اطلاعات ہیں کہ ڈاکٹرز نے او پازیٹیو خون لگانے کی سفارش کی ہے۔

اطلاعات کے مطابق نواز شریف کے پلیٹ لیٹس میں خطرناک حد تک کمی ہوئی ہے اور بڑھانے کے لیے میگا یونٹ لگانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

سابق وزیراعظم نواز شریف کا الٹراساونڈ کیا گیا اور میگا یونٹ کیٹس بھی تیار کرلی گئیں۔

سیکرٹری صحت مومن آغا بھی سروسز اسپتال پہنچ گئے ہیں اور انہوں نے مزید ماہرین طب کو سروسز اسپتال طلب کرلیا ہے۔

نوازشریف کے لیے6 رکنی میڈیکل بورڈ بھی تشکیل دے دیا گیا جس کے سربراہ ڈاکٹر محمود ایاز ہوں گے۔ بورڈ میں ڈاکٹر کامران خالد چیمہ، ڈاکٹر عارف ندیم، ڈاکٹر فائزہ بشیر، ڈاکٹر خدیجہ عرفان اور ڈاکٹڑ ثوبیہ قاضی شامل ہیں۔

سابق وزیراعظم کو پلیٹلیٹس کی تعداد انتہائی کم ہونے کی بنا پر نیب سروسز ہسپتال منتقل کیا گیا ہے جہاں ان کا علاج جاری ہے۔

ذرائع کے مطابق اسپتال کے وی آئی پی کمرے کو ہی نیب کی سب جیل قرار دے دیا گیا ہے اور ڈاکٹروں کے علاوہ کسی کو سابق وزیراعظم سے ملاقات کی اجازت نہیں ہو گی۔

نوازشریف جب تک جیل میں رہیں گے نیب اور پولیس کے اہلکار وہاں موجود رہیں گے

https://pagead2.googlesyndication.com/pagead/js/adsbygoogle.js

اپنا تبصرہ بھیجیں