سبی ہرنائی ریلوے سیکشن کی قسمت جاگ اٹھائی

0

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

سبی: ویب رپورٹر

سال سے بند سبی ہرنائی رےلوے سےکشن کی قسمت جاگ اٹھائی بحالی منصوبے پر تےزی کے ساتھ کام جاری سبی ہرنائی رےلوے لائن کی بندش سے محکمہ رےلوے کا اربوں کا نقصان جبکہ عوام رےل کے سستے سفر سے محروم معدنےات زرعی اجناس کی رےل کے زرےعے تر سےل سلسلہ بھی بند ، نےشنل لاجسٹک سےل پاکستان کے انجینئرزسبی ہرنائی سےکشن کی بحالی کےلئے دن رات سرگرم 2018تک سےکشن کی بحالی کےلئے کام مکمل کرنے کی نوےد سنا دی سبی ہرنائی کی عوام مےںخوش کاسمان۔

تفصےلات کے مطابق انسانی معاشروں اور تمدن کی ترقی مےں مواصلاتی نظام کلیدی کردار ادا کرتا ہے فاصلوں کو کم کرنے مےں رےلوے نے ہمےشہ اہل رول پلے کےا اسی مقصد کو پاےہ تکمےل تک لے جانے کےلئے 1883مےں برطانوی دور مےں ان تمام وسائل کو بروئے کار لانے کےلئے ہرنائی ودےگر علاقوں کے اونچے اونچے پہاڑوں کو کاٹ کر حےرت انگےررےلوے لائن کا منصوبہ بناےا گےا 1948 مےں باقاعدہ سبی ہرنائی ،ناکس شاہرگ اور خوست سمےت بوستان اور ژوب تک تےن سوکلومےٹر طوےل ترےن رےلوے لائن کو تارےخی اہمےت کا حامل بنادےا گےا اس منصوبے نے دنےا کے ماےہ ناز انجےنئر کو حےرت زدہ کرڈالا ، ہرنائی وسائل سے مالامال علاقہ ہے جس کی تما م پہاڑی معدنےات کی دولت سے مالامال ہےں ہرنائی ناکس شاہرگ خوست زردآلو تک ہزاروں فٹ اونچا اور 65کلومیٹر طوےل ترےن سورغراور تورغر کے پہاڑی سلسلے کوئلے کے ذخائز سے بھرے پڑے ہےں ہرنائی سے بذریعہ ٹرےن ہزاروں ٹن کوئلہ اندروں ملک براستہ سبی سپلائی ہونے کی وجہ سے رےلوے سروس سے محکمہ رےلوے کو روزانہ 50کروڑسے زائد فائدہ ہوتا تھا ، جنوری 2006کو نامعلوم افراد نے پانچ5بڑے رےلوے پلوں اور رےلوے ٹرےک کو دھماکہ خےز مواد سے نقصان پہنچاےا جس کے بعد رےلوے سروس معطل ہوگئی ۔

جنوری 2006سے آج تک سبی ہرنائی سےکشن کو بحال نہےں کےا گےا ، محکمہ رےلوے کے مطابق تباہ شدہ ٹرےک او رپلوں کا سروئے کا کام چند سال قبل ہی مکمل کرلیا گےا تھا جس کا تخمینہ لاگت 90کروڑ روپے لگاےا گےا تھا2006سے قبل سبی ہرنائی رےلوے سےکشن مےں ٹرےن سروس مےں ماہانہ دوہزار سے 2500 تک مال گاڑی کی بوگیاں لگائی جاتی تھےں جن مےں کوئلہ ، پھل، سبزیاں ودےگر اشےاءلوڈ ہوتی تھےں جن کی آمدنی مالانہ لاکھوں اور سالانہ اربوں روپے ہوتی تھےں جس سے محکمہ رےلوے کا فائدہ ہوتا تھا ، سبی بھاگ ، شاہرگ ، ناڑی ، ناکس ، بابر کےچ، سپن تنگی، کھوسٹ اس سےکشن کے اہم علاقہ ہےں ۔

ان علاقوں مےں رہائش پذےر افراد اور زمےنداروں کو سبی ہرنائی رےلوے سروس بند ہوجانے کی وجہ سے مشکلات کا سامنا ہے ، سبی ہرنائی رےلوے سروس کی بحالی کےلئے سابق صوبائی حکومت سمےت نگران حکومت نے کافی کوشش کی لےکن وہ عوام کو رےلیف فراہم کرنے مےں کانامی کا شکا ر رہے 11مئی کے عام انتخابات کے بعدوفاق مےں مسلم لےگ ن کی حکومت آنے کی وجہ سے بلوچستان خاص کر سبی ہرنائی ودےگر علاقوں کی عوام کو امےد ہے کہ وزےراعلیٰ بلوچستان نواب ثناءاللہ زہری کی قائدانہ صلاحیتوں سے سبی ہرنائی رےلوے سےکشن بحال ہو سکتا ہے سبی ہر نائی کی عوام کے دےرینہ مطالبہ پر مسلم لےگ ن کی مرکزی حکومت سمےت نےشنل پارٹی کے مرکزی رہنما سابق وزےر اعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ ، مسلم لےگ ن کے صوبائی صدر موجودہ وزےر اعلیٰ بلوچستان نواب ثناءاللہ زہری ، پشتونخواملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی پشتونخواملی عواملی پارٹی کے رہنما عبدالرحےم زےارت وال سمےت بلوچستان کے منتخب نمائندوں نے مسئلہ پر سنجےدگی سے توجہ دی

باقاعدہ سبی ہرنائی سےکشن کےلئے دن رات محنت کرنے کے بعد وفاقی حکومت نے سبی ہرنائی سکےشن کی بحالی کےلئے فنڈز جاری کردئےے جس پر تےزی کے ساتھ ہوم ورک کےا گےا اور باقاعدہ ٹےنڈز طلب کئے گئے ملک مےں تعمےرات کےلئے بہترےن سروس مہےا کرنے والی نےشنل لاجسٹک سےل پاکستان نے مذکورہ رےلوے لائن کو بحال کرنے کے منصوبے پر عمل شروع کےا سروئے مکمل کرکے کام کا آغاز کردےا گزشتہ دنوں نےشنل لاجسٹک سےل پاکستان کے ڈائرےکٹر جنرل مےجرجنرل فےصل مشتاق نے دورہ کےا اور کام کا تفصےلی معائنہ بھی کےا انہوں نے مزےد بتاےا کہ نےشنل لاجسٹک سےل کے انجینئرز موسمی اثرات کی پرواہ کئے بغےر سبی ہرنائی سےکشن کی بحال کےلئے دن رات اپنی صلاحیتوں کو بروئے کار لاکر بحالی کا کام کررہی ہے جو 66فیصد مکمل ہوچکا ہے

سبی ہرنائی سےکشن 2018تک مکمل کرلیا جائے گا سبی ہرنائی سےکشن کی بحالی کی اطلاعات پر سبی ہرنائی سکےشن کی عوام مےں خوشی کا سمان پےدا ہوگا جو اس سےکشن کی بحالی سے ماےوسی کا شکار ہوگئے تھے واضح رہے کہ نےشنل لاجسٹک سےل کے ڈائرےکرٹر جنرل مےجر جنرل فےصل مشتاق کی سبی آمد پر میڈےا کے کئی نمائندوں کو اطلاع بھی نہےں دی گئی جس کے باعث کئی صحافی ماےوسی کا شکار ہوئے میڈےا کے نمائندوں کا کہنا تھا کہ اےسے کامیاب پروجےکٹ کی تکمےل کے آخری مراحل مےں مقامی میڈےا کو نظر انداز کرنا سمجھ سے بالاتر ہے جبکہ نےشنل لاجسٹک سےل نے ہمےشہ مقامی میڈےا کے نمائندوں کو ترجےحات مےں شامل کرتے ہوئے اپنے منصوبوں کی بہتر کوریج کےلئے قلم اور کےمرے کے استعمال کےلئے مواقع فراہم کئے نےشنل لاجسٹک سےل پاکستان کے ڈائرےکٹر جنرل مےجرجنرل فےصل مشتاق اس سلسلے مےں اپنا کردار ادا کرےں گے ۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: