کک باکسنگ مقابلے بلوچستان سے تین خواتین کھلاڑی ملک کی نمائندگی کرنے آزربائیجان پہنچ گئیں

0

رپورٹ ، مہک شاہد

بلوچستان میں جہاں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں ہے۔ یہاں پر سہولیات نہ ہونے کی وجہسے خصوصاً بچیاں اپنے ٹیلنٹ کو اْجاگر نہیں کر پاتیں، بہت سی بچیاں پہلے ہی ہمت ہار جاتی ہیں

پاکستان کک باکسنگ کی تاریخ میں پہلی بار وومنز ٹیم کسی عالمی دورے پر گئی ہے

چیمپئن شپ 25 جنوری تا 30 جنوری وسط ایشیائی ریاست آذر بایئجان میں منعقد ہورہی ہے اور وومنز ٹیم میں تینوں لڑکیاں جن میں فاطمہ، رابعہ اور سعیدا فدا شامل ہیں

ان کا تعلق بلوچستان کی سر زمین سے ہے یہ ان کے پاس پہلا موقع ہے کہ اپنے ٹیلنٹ کو دنیا کے سامنے منوا سکیں۔

بلوچستان کے شہر مچھ سے تعلق رکھنے والی 18 سالہ باکسر ’’سعیدہ فدا‘‘ جن کے اندر بچپن سے ہی جنون تھا کہ وہ کسی کھیل کے ساتھ منسلک ہو جائیاور اپنے والدین اور ملک کا نام روشن کرسکے۔

سعیدہ فدا نے کم عمری میں ہی لڑکوں کے کھیل باکسنگ کی تربیت لینا شروع کی اور آج وہ ملک کے لئے کھیل رہی ہیں

یہ بھی پڑھیں
1 of 8,770

بلوچستان24 سے بات ہو? سعیدہ فدا کی بہن حمیدہ فدابلوچستان 24کو بتایا کہ ’’بچپن سے ہی سعیدہ فدا کو کھیلنے کا بے حد شوق تھا،

2013 میں جب مچھ میں حالات خراب ہوئے تو ہم کوئٹہ شفٹ ہوگئے اور باکسنگ کا آغاز سعیدہ نے 2013 میں کوئٹہ سے کیا۔

باکسنگ سے پہلے مختلف سرگرمیوں میں بھی حصّہ لیتی رہی ہیں اور ہمیشہ پوزیشن حاصل کی ہے، باکسنگ کے علاوہ کراٹے، سائیکل ریسنگ اور فٹبال کے ٹورنامنٹس بھی حصہ لے چکی ہیں‘‘

سعیدہ فدا باکسنگ سے پہلے کراٹے چیمین کھیل چکی ہیں جس میں انہوی نے پہلی پوزیشن حاصل کی اور سائیکل ریسنگ بلوچستان سطح پر کھیلتے ہوئے بھی فرسٹ پوزیشن حاصل کرچکی ہیں،

اس کے علاوہ مختلف سرگرمیوں میں حصّہ لے چکی ہیں جہاں انہوں نے پوزیشن حاصل کرکے اپنے ٹیلنٹ کو اْجاگر کیا ہے۔ اور اب وہ باکسنگ کیساتھ منسلک ہیں اور پاکستان کی کامیاب باکسر بننا چاہتی ہیں۔

بلوچستان میں ہر رنگ، ہر زبان، ہر ٹیلنٹ کے لوگ ملیں گے اس میں عمر کی کوئی قید نہیں ہے چاہے وہ آپ کی بچیاں ہوں یا خواتین ہوں۔ حکومت کو چاہیے کہ وہ ان کے ٹیلنٹ کو اجاگر کرے اور بھرپور سپورٹ کرے، سعیدہ فدا کی طرح اور بھی بچیاں آگے جانا چاہتی ہیں لیکن ان کے پاس کوئی پلیٹ فارم نہیں ہے۔

حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے حمیدہ فدا کا کہنا تھا کہ ’’حکومت کو چاہیے کہ خاص کر بچیوں میں جو ٹیلنٹ ہے ان کو اجاگر کرنے کے لئے ان کی فنڈنگ کریں، ان کو وہ سہولیات مہیا کرے جہاں وہ آذادانہ ماحول میں کھیل سیکھیں اور ملک و قوم کا نام روشن کر سکیں، اس کے علاوہ حکومت کو چاہیے کہ وہ کلب وغیرہ کی سہولیات بھی فراہم کرے‘‘

امید ہے سعیدہ فدا کے ساتھ ساتھ قومی کک باکسنگ وومنز ٹیم ٹورنامنٹ میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرینگی اور ملک و قوم کا نام روشن کرینگی۔

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.