بلوچستان ،ڈیمز اور نہری نظام کی بہتری کیلئے وفاق کاتعاون ناگزیر ہے ،نوابزادہ طارق مگسی

0

ویب ڈیسک

بلوچستان کی نصف آبادی کا گزر بسر زراعت اور لائیو اسٹاک پر ہے اور اگر زراعت کے لیے پانی میسر نہیں ہوگا تو اس کے براہ راست اثرات معیشت پر ہونگے اس سنگین صورتحال سے نمٹنے کے لیے ہمیں صوبہ بھر میں ڈیمز کا نیٹ ورک بچھانا ہوگاتاکہ پانی کے ممکنہ بڑے بحران سے بچا جا سکے

بلوچستان میں ڈیموں کی تعمیر اشد ضروری ہے اور محکمہ آبپاشی اس ضمن میں جامع حکمت عملی کے تحت موثر اقدامات اٹھانے کے لیے تمام دستیاب وسائل کو بروئے کار لارہا ہے

ہمیں سیلابی پانی کو ذخیرہ کرنے کیلئے چیک اور بڑے ڈیمز تعمیر کرنے ہوں گے جن سے زیر زمین پانی کے ذخائر میں اضافہ ہوگا اس کے علاوہ دستیاب پانی کے بہتر استعمال کو بھی یقینی بنانا ہوگا

یہ بھی پڑھیں
1 of 8,759

ڈیمز اور بلوچستان کے نہری نظام کی بہتری اور توسیع کیلئے وفاق کا تعاون ناگزیر ہے اس ضمن میں اب وفاقی حکومت سے فنڈز کی فراہمی کیلئے رابطہ کیا جائے گا

بارشوں میں کمی کی وجہ سے زیر زمین پانی کی سطح تیزی سے گر رہی ہے اس صورتحال پر قابو پانے کے لیے محکمہ آبپاشی قابل عمل سفارشات کی تیاری اور زیر تعمیر ڈیمز کی فوری تکمیل کو یقنی بنانے کے لیے موثر اقدامات اٹھا رہا ہے

مجوزہ ڈیمز کے لیے مکمل سروے اور اسٹڈی کیساتھ ساتھ آئندہ سوپارکو سے بھی مواصلاتی معاونت لی جائے گی تاکہ ڈیمز کی تعمیر کے لئے مناسب مقام منتخب کیا جاسکے

صوبائی وزیر آبپاشی نوابزادہ طارق مگسی کی صوبائی مشیر لائیوسٹاک مٹھا خان کاکڑ اور سابق صوبائی وزیر میر طارق کھیتران سے گفتگو سیکرٹری آبپاشی سلیم اعوان بھی موجود تھے

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.