کوئٹہ سے افغانستان تک کا سفر

رپورٹ۔۔۔۔عابدہ بلوچ

افغانستان پاکستان کا ہمسایہ اسلامی بردار ملک ہے جس کی سرحد بلوچستان اور کے پی کے کہ ساتھ منسلک ہے میرے دماغ میں افغانستان کا نقشہ جنگ زدہ ماحول کا تھا ایک ایسا خطہ جس کی سر زمین پر جنگ کے سوا کچھ نہیں لیکن میرے خیالات با لکل غلط نکلے افغانستان ایک دوست اور امن کے خواہش رکھنے والا ملک ہے

مھجے یہ اعزاز میڈیا ٹرینگ ریسرچ سنیٹر کی جانب سے ملا کہ میں نے پاکستان کی نمائندگی کرنے پاکستان کے مختلف خطوں سے چنے گئے صحافی ٹیم کے ساتھ افغانستان کے دارلحکومت کابل کا دورہ کیا جہاں پانچ روزہ امن سفیر کا سیشن رکھا گیا

جس میں پاکستان اورافغانستان کے نوجوان صحافیوں اور طلباء کے درمیان پاکستان اور افغانستان کے تاریخ اور سیاست پر بات چیت اور سوال جواب کےسیشن رکھے گئے دونوں ممالک کے درمیان امن کو مزید کیسے فروغ دینا ہے اس حوالے سے بحث و مباحثہ ہوا،،،کابل میں دو دن کے سیمینار کا فائدہ یہ ہوا کہ افغانستان اور پاکستان کے نوجوانوں کے ذہنوں میں دونوں ممالک کے بارے میں جو ایک منفی منظر کشی کی گئی تھی وہ ایک حد تک مثبت پہلو میں بدلگئی

کابل پہنچنے پر پاکستان کے امن دستے کا پر جوش استقبال کیا گیا پہلے دن دونوں ملکوں کے امن سفیروں کا ایک دوسرے سے تعارف کا سلسلہ بخوبی سر انجام پایا. وہاں قیام کے دوران ہمیں کچھ عوامی اور سرکاری دفاتر کا دروہ بھی کروایا گیا.

جس میں افغانستان فارن افئیر منسٹری، انڈیپینڈنٹ ایڈمنسٹریٹو ریفارمز اینڈ سول سروسز کمیشن، اور پاکستان ایمبیسی کے دفاتر شامل ہیں. یہاں کے اعلیٰ افسران سے ملاقات کی گئی اور پاک افغان امن کے موضوع کو زیرِ بحث رکھا گیا.

جس پر انہوں نے اپنی رائے کا اظہار خیال کیا اور ہمیں بھی کچھ تجاویز پیش کی. جن سے ہم مستقبل قریب میں اپنے اس امن پروگرام کو مزید بہتر اور موثر بنا سکتے ہیں

پاکستان اور افغانستان اپنے روایتی کھانوں اور رسم و رواج کے لحاظ سے بھی پوری دنیا میں ایک خاص مقام رکھتے ہیں اور وہی قومیں کامیابی اور ترقی کو سفر طے کرتے ہیں جو اپنی روایات کو کھبی نہیں بھولتے

امید رکھتے ہیں کہ مستقبل میں آئندہ ہونے والی ملاقاتوں میں نا صرف پاکستان اور افغانستان امن سفیر امن کی کوششوں کو برقرار رکھے گے بلکہ باہمی ہمدردی اور دوستی کا ہاتھ مزید مضبوط کریں گے

https://pagead2.googlesyndication.com/pagead/js/adsbygoogle.js

اپنا تبصرہ بھیجیں