پولیو کے خاتمے میں قبائلی عمائدین کا کردار ناگزیر ہے

پاکستان دنیا کے ان تین ممالک میں شامل ہے جہاں اب پولیو کے کیسز سامنے آرہے ہیں۔

0

بلوچستان24اسٹاف رپورٹر
پولیو ایک موذی مرض ہے جس کے خاتمے کیلئے  ہم سب نے ملک کر  اپنا کردار ادا کرنا پڑیگا ۔ کورنا وائرس کے باعث  ملک میں  کہی مہینے سے  انسداد پولیو مہم کا انعقاد ممکن  نہیں ہوسکا  جس کی وجہ سے  ملک میں  پولیو  وائرس  شدت سے پھیلنے کا خدشہ ہے ۔ اس خطرے سے نمٹنے کیلئے  انسداد پولیو مہم کو کامیاب  کرنا ہر شہری کا  فرض ہے۔ یہ  ڈپٹی کمشنر  کوئٹہ  اورنگزیب بادینی  نے  سیاسی و قبائلی رہنما  میر غلام رسول مینگل  کے  سربراہی میں  قبائلی  عمائدین  سے  گفتگو کرتے ہوئی کہی ۔

اورنگزیب  بادینی کا  اس موقع پر مزید کہنا تھا  کہ  قبائلی عمائدین، سیاسی  رہنماوں  اور  سوشل  ایکٹویسٹ  پولیو  کے خاتمے  ایک متحرک کردار  ادا کرسکتے ہیں۔  انسداد پولیو مہم میں ان کی شراکت داری  ناگزیر ہے۔

اورنگزیب بادینی  نے اس بات پر زور  دیا  کہ  کورنا وائرس کے باعث  انسداد پولیو مہم  معطلی  کی باعث  بچوں  میں  پولیو وائرس سے بچاو  کی مدافعت  کم ہوئی ہے  جس کی وجہ سے  ہمارے  بچوں کے سروں پر پولیو  کا  خطرہ منڈلا رہا ہے۔ والدین کو اس بات کا  ادارک کرنا چاہیے۔ اور پولیو ورکرز  سے  تعاون کرے ان کیلئے اپنے  گھروں کے دروازے کھول دیں  اور اپنے  بچوں کو  پولیو سے بچاو  کے قطرے  لازمی پھلائیں  تاکہ  ہم   اس موذی مرض سے  لڑ سکے اور  اس کو ختم کرنے میں کامیاب  ہوسکیں  اور  یہ تب ممکن  ہے جب  والدین قبائلی عمائدین، علماء کرام اور  دیگر مکتبہ فکر کے  لوگ  اس کاز میں  ایک مثبت کردار  ادا کرے۔

اس  موقع پر میر غلام روسول مینگل  نے  ڈپٹی کمشنر  اورنگزیب  بادینی کو  یقین  دلایا کہ وہ اپنے علاقے میں انسداد پولیو  مہم  کو کامیاب کروانے میں ہر ممکن تعاون  فراہم کریں گئے۔
اس  موقع پر  ایریا کوارڈینٹر  ڈاکٹر صفدر زرکون، ڈسٹرکٹ  ڈیلیوری  آفیسر  غلام سرور ناصر ، یونین کونسل کمیونیکشن  آفیسر عبدالکریم اور  ایریا انچارج عبدالکریم لہڑی بھی موجود تھے۔

یاد رہے  پاکستان  دنیا کے ان تین  ممالک میں شامل ہے  جہاں اب  پولیو  کے کیسز  سامنے آرہے  ہیں۔2017میں محض 8اور 2018 میں  12کیسز سامنے کے بعد پاکستان میں 2019ایک بار پھر 147کیسز سامنے  آئے اور رواں سال اب تک 74 بچے  پولیو وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: